سیدہ مریم اور سیدہ آسیہ علیہما السلام جنت میں نبی کریم ﷺ کی بیویاں

سیدہ مریم اور سیدہ آسیہ علیہما السلام جنت میں نبی کریم ﷺ کی بیویاں

سیدہ مریم اور سیدہ آسیہ علیہما السلام کا جنت میں نبی کریم ﷺ کی بیویاں ہونا کسی صحیح حدیث سے ثابت نہیں۔ جنت میں حضور ﷺ کی بیویاں کے بارے میں جتنی بھی روایات ہیں، ان میں سے کوئی بھی اصولِ محدثین کے مطابق پایۂ ثبوت کو نہیں پہنچتی۔

جنت میں نبی کریم ﷺ کی بیویاں سیدہ مریم اور سیدہ آسیہ

 رسول اللہ ﷺ نے سیدہ عائشہ رضی اللہ وعنہما سے فرمایا:

أَشَعَرْتِ أَنَّ اللهَ عَزَّ وَجَلَّ زَوَّجَنِي فِي الْجَنَّةِ مَرْيَمَ بِنْتَ عِمْرَانَ، وَكَلْثَمَ أُخْتَ مُوسَى، وَامْرَأَةَ فِرْعَوْنَ

” کیا آپ کو معلوم ہے کہ اللہ تعالیٰ نے جنت میں مریم بنت عمران ، موسی کی بہن کلثم اور فرعون کی بیوی (آسیہ) سے میرا نکاح کردیا ہے۔“

(المعجم الکبیر للطبرانی : ۲۵۹/۸ ، ح : ۸۰۰۶ ، الکامل فی ضعفاء الرجال لابن عدی : ۱۸۰/۷)

موضوع (من گھڑت): یہ جھوٹی روایت ہے؛

۱: اس کی سند میں خالد بن یوسف السمتی راوی جمہور کےنزدیک” ضعیف “ ہے۔

٭ امام ابن عدی (الکامل : ۴۵/۳) ، حافظ ذہبی (میزان الاعتدال : ۶۴۸/۱) اور حافظ ہیثمی (مجمع الزوائد : ۲۱۸/۹) رحمہم اللہ نے اسے ” ضعیف“ کہا ہے۔

۲: اس کی سند میں عبد النور بن عبد اللہ راوی ”وضاع “ ، یعنی خود حدیثیں گھڑ کر رسول اللہ ﷺ کی طرف منسوب کرنے والا ہے۔

٭ اس کے بارے میں امام عقیلی رحمہ اللہ فرماتے ہیں :” یہ شخص غالی رافضی تھا ، حدیثیں گھڑتا تھا اور خبیث النفس تھا۔“ (الضعفاء الکبیر للعقیلی : ۱۱۴/۳ ، ت : ۱۰۸۷)

۳: اس کے ایک راوی یونس بن شعیب کے بارے میں امام بخاری رحمہ اللہ ”منکر الحدیث“ کے الفاظِ جرح استعمال کرتے ہیں۔ (الکامل فی ضعفاء الرجال لابن عدی۱۸۰/۷ ، و سندہ حسن)

٭ امام عقیلی رحمہ اللہ فرماتے ہیں : ” اس کی حدیث غیر محفوظ ہے۔“ (الضعفاء الکبیر للعقیلی : ۴۵۹/۴)

٭ شیخ البانی رحمہ اللہ نے اس روایت کو موضوع قرار دیا ہے ۔ (السلسلۃ الضعیفۃ:۷۰۵۳)

اس طرح کی اور روایات بھی ملتی ہیں جن میں سیدہ مریم اور سیدہ آسیہ علیہما السلام کو جنت میں نبی کریم ﷺ کی بیویاں قرار دیا گیا ہے لیکن وہ ساری روایات پایۂ ثبوت کو نہیں پہنچتی۔

Related Posts
Leave a reply
Captcha Click on image to update the captcha .