نبی کریم ﷺ رات کے اندھیرے میں بھی دن کی طرح دیکھتے تھے۔

نبی کریم ﷺ رات کے اندھیرے میں بھی دن کی طرح دیکھتے تھے۔

سیدنا عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں:

کَانَ رَسُولُ اللہِ ﷺ یَرٰی بِاللّیلِ فِي الظُّلمَةِ کَمَا یَرٰی بِالنَّھَارِ مِنَ الضَّوءِ
”رسول اللہ ﷺ رات کے اندھیرے میں ویسے ہی دیکھتے تھے، جیسے دن کے اجالے میں دیکھتے تھے۔“

(دلائل النّبوة للبیھقي: ۷۵/۶)

سخت ضعیف: اس روایت کی سند ”سخت ضعیف“ ہے۔

۱: عبد الرحمٰن بن عمار شہید کون ہے؟ معلوم نہیں!

۲: صالح بن عبد اللہ نیشاپوری بھی لاپتہ ہے۔

۳: ابو عبد اللہ محمد بن خلیل نیشاپوری کی توثیق درکار ہے!

۴: مغیرہ بن مسلم قسلمی کا عطا سے سماع نہیں۔

٭ امام ابو زرعہ رحمہ اللہ فرماتے ہیں:
”مغیرہ کا عطا سے سماع نہیں، لہٰذا سند مرسل ہوئی۔“ (تحفة التّحصیل: ص ۳۱۳)

تنبیہ: اس سند کو امام بیہقی رحمہ اللہ کا ”لیس بالقوی“ (مضبوط نہیں) قرار دینا ”تساہل“ ہے۔

 

دوسری روایت: تاریخ ابن عساکر (۳۷۸/۶۰) میں عبد اللہ بن زبیر کی ”مرسل“ روایت ہے:

کَانَ النَّبِیُّﷺ یَبصِرُ فِي الظُّلمَةِ کَمَا یَبصُرُ فِي الضَّوءِ
”نبی کریم ﷺ اندھرے میں ایسے دیکھتے، جیسے اجالے میں دیکھتے۔“

سخت ضعیف: یہ روایت سخت ترین ضعیف ہے۔

۱: اس کے راوی محمد بن مغیرہ مدنی کے حالات نہیں مل سکے۔

۲: ابو جماہیر مخلص کی توثیق نہیں ملی۔

۳: اس کے باپ موحد بن محمد بن عثمان کی بھی توثیق نہیں ملی۔

٭ حافظ ابن الجوزی رحمہ اللہ لکھتے ہیں:
”یہ حدیث ثابت نہیں۔“ (العِلَل المتناھیة: ۱۶۸/۱، ح: ۲۶۶)

Related Posts
Leave a reply
Captcha Click on image to update the captcha .